fbpx

دنیا کی سب سے بڑی ہاتھوں کی تصویر کا استنبول سے گزر

فرانسیسی آرٹسٹ سیائپ ، جن کا اصل نام گیلوم لیگروز ہے ، استنبول میں اپنی ماہر آرٹ پروڈکشن کو دیواروں پر خوبصورت تصاویر بنانے کے منصوبے کے تحت استعمال کر رہے ہیں جس میں وہ قطبی دنیا کے سب سے بڑے انسانی سلسلے کی علامت کے لئے دیواروں پرجڑے ہوئے ہاتھوں کو پینٹ کر رہے ہیں۔

خود مختار  سیائپ آج ماحولیاتی ذمہ داری کا خیال رکھتے ہوئے  پینٹ سے بنی گھاس پر اپنی پینٹنگز کے لئے جانے جاتے ہیں  جسے انہوں نے کوئلے اور چاک کے ذریعے بنایا  تھا۔

 اس کے علاوہ دیواروں کے پروجیکٹ میں انہوں نے ایسی تصاویر بنائی ہیں جو انسانوں کو جدا کرنے اور انہیں ذہنی یا جغرافیائی جگہوں میں بند کرنے سے باہر ایک مشترکہ کوشش میں مدد فراہم کرتی ہیں۔

اس طرح ، ذہنیت میں کھڑی ہوئی دیواریں فنکارانہ تخیل سے مٹ جانے کے ساتھ افسانوی حصے بن جاتی ہیں۔

استنبول آٹھویں جگہ بن گیا ہے جہاں سیا ئپ نے لوگوں سے بڑھ کر خیر سگالی اور بقائے باہمی کی دعوت دیتے ہوئے دیواروں کے منصوبے کے  طور پر دو ہاتھوں کی تصویر بنائی ۔

یورپ اور افریقہ کو اکٹھا کرنے کے بعد ، فرانسیسی فنکار کے تیار کردہ بڑے ہاتھ باسپورس کے یورپی حصے میں آتے ہیں اور ایشین ساحلوں تک پہنچتے ہیں۔

پروجیکٹ کے پچھلے اسٹاپس میں پیرس ، انڈورا ، جنیوا ، برلن ، برکینا فاسو      کا   دارالحکومت اواگادوگو ، کوٹ ڈی آئوائر کا یاموسسوکرو اور اٹلی کا ٹیورن شامل ہے۔

 استنبول کے لئے سیائپ کے کاموں کی تصویری نمائش نومبر تک تکسیم سنات گیلری میں حاضرین  کے لیے پیش کی جائے گی۔

نیز 8 نومبر تک ان کی نمائش ترکی کے فرانسیسی ثقافتی مرکز میں ہوگی۔

پچھلا پڑھیں

97 یوم جمہوریہ ، سنگاپورین بچی کی والن پر ترک قومی ترانے کی وڈیو وائرل

اگلا پڑھیں

ترکی آج اپنا 97 واں یوم جمہوریہ ملی جوش و جذبے سے منا رہا ہے

تبصرہ شامل کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے