turky-urdu-logo

آذربائیجان میں صدارتی انتخابات

آذربائیجان میں بدھ کے روز صدارتی انتخابات کے لیے ووٹنگ شروع ہوگئی۔

پہلی بار ان علاقوں میں بھی  ووٹنگ ہو رہی ہے جو 30 سال سے زیادہ عرصے سے آرمینیا کے قبضے میں تھے۔

بیرون ملک سمیت 6,500 سے زیادہ پولنگ اسٹیشنز میں مقامی وقت کے مطابق صبح 8 بجے ووٹنگ کا آغاز ہو گیا اور یہ عمل شام 7 بجے تک جاری رہے گا۔

بین الاقوامی تنظیموں اور ممالک کے تقریباً 800 غیر ملکی اور 90,000 مقامی مبصرین انتخابات کی نگرانی کر رہے ہیں، ساتھ ہی مقامی پریس اور تقریباً 200 غیر ملکی صحافی بھی پولنگ اسٹیشن پر موجود ہیں۔

آذربائیجان کے صدر الہام علی یوف،  خاتون اول مہربان  علی یوف اور ان کے خاندان کے افراد نے خانکنڈی شہر کے پولنگ اسٹیشن نمبر 14 پر ووٹ ڈالا۔

صدارتی انتخابات میں حصہ لینے کے لیے سات امیدواروں کو رجسٹر کیا گیا ہے جن میں موجودہ سربراہ مملکت الہام علیوف بھی شامل ہیں۔

علی یوف  کو ینی آذربائیجان پارٹی (EPA) نے نامزد کیا ہے۔

چھ دیگر امیدواروں میں National Front Party کے چیئرمین رازی نورلائیف، head of the Great Creation Party فضل مصطفیٰ، Great Azerbaijan Party  کے چیئرمین الشاد موسیوف، آhead of the People’s Front of All Azerbaijan party  گدرت حسنگولیوف اور آزاد امیدوار زاہد اوروچ اور فواد شامل ہیں۔

آذربائیجان میں آخری صدارتی انتخابات، جو ہر سات سال بعد ہوتے ہیں، 11 اپریل 2018 کو ہوئے تھے۔

علی یوف کے دستخط شدہ ایک حکم نامے کے ذریعے، صدارتی انتخابات، جو اکتوبر 2025 میں ہونے والے تھے انہیں 7 فروری کو شروع کروایا گیا۔

2020-2023 میں آذربائیجان کی طرف سے آرمینیائی قبضے سے آزاد کرائے گئے علاقوں میں بھی پولنگ سٹیشن کھل گئے ہیں۔

اس طرح، 30 سالوں میں پہلی بار، آذربائیجان کے پورے علاقے میں صدارتی انتخابات ہو رہے ہیں۔

22,000 سے زیادہ ووٹر  ان الیکشن میں اپنا ووٹ کاسٹ کریں گے۔

Alkhidmat

Read Previous

استنبول میں سیاحتی میلے کا آغاز

Read Next

ترک وزیر خارجہ کی طرابلس میں لیبیا کے وزیراعظم سے ملاقات

Leave a Reply