ترکش سینٹرل بینک نے مہنگائی بڑھنے کا عندیہ دے دیا

ترکش سینٹرل بینک نے کہا ہے کہ اس سال ملک میں مہنگائی کی شرح 12 فیصد سے زائد رہے گی۔ اس سے پہلے افراط زر کی شرح کا تخمینہ 8.9 فیصد لگایا گیا تھا۔

سینٹرل بینک نے آئندہ سال میں بھی مہنگائی کے سابقہ تخمینوں میں رد و بدل کیا ہے۔ 2021 میں 6.2 فیصد مہنگائی کا تخمینہ لگایا گیا تھا لیکن سینٹرل بینک کا کہنا ہے کہ مہنگائی بڑھ کر 9.4 فیصد ہو جائے گی۔

سینٹرل بینک کی رپورٹ کے مطابق مہنگائی کے یہ تخمینے اس امید پر لگائے گئے ہیں کہ ترکی میں کورونا وائرس کی دوسری لہر نہیں آئے گی۔ اگر ملک میں وائرس نے دوبارہ سر اٹھایا تو مہنگائی کو بڑھنے سے روکا نہیں جا سکتا۔

واضح رہے کہ ترکی اور یورپ کے درمیان سیاسی تنازعہ بڑھنے سے ترکش لیرا کی قیمت تیزی سے گر رہی ہے۔ اس وقت ایک امریکی ڈالر 8 ترکش لیرا کے برابر ہو گیا ہے۔ اس سال ترکش لیرا تیزی سے ڈی ویلیو ہوا ہے۔

اگر ترکی کی برآمدات میں اضافہ نہ ہوا تو ترک کرنسی پر دباوٗ برقرار رہے گا۔

Read Previous

فرانس میں انتہاپسند مساجد اور مسلمانوں کو دھمکیاں دینا شروع ہو گئے

Read Next

اسٹاک مارکیٹ میں اتا ڑ چڑھاو کا مضبوط ترک معیشت سے کوئی تعلق نہیں، ترک وزیر

Leave a Reply