ترک اپنی آزادی کا 101 واں جشن آج منائیں گے

جدید ترکی کے بانی کمال اتاترک نے 4 ستمبر 1919 میں ترک شہر سیواس میں کانگریس منعقد کی جس میں ترکی کی آزادی کے لئے مستقبل کا لائحہ عمل تیار کیا گیا۔


سیواس شہر میں آج جشن آزادی منائی جائے گی جس میں ترکی اور ہنگری کے درمیان فٹ بال میچ بھی تماشائیوں کے بغیر کھیلا جائے گا۔


کمال اتاترک نے فوج کی مدد سے سیواس میں ایک بڑی کانفرنس منعقد کی جو ٹرکش نیشنل موومنٹ کی بنیاد بنی۔


اس سے پہلے ترک اپنی آزادی کی مسلح جنگ لڑ رہے تھے تاہم اس کانفرنس کے بعد ترکوں نے بات چیت اور مذاکرات کے ذریعے آزادی حاصل کرنے کو ترجیح دی۔


سیواس شہر میں جشن آزادی کی تقریبات کورونا وائرس کی وجہ سے محدود پیمانے پر منعقد کی جائیں گی۔


کمال اتاترک نے 19 مئی 1919 میں بحیرہ اسود کے صوبے سیمسن میں آزادی کی کوششیں شروع کیں تاہم جلد ہی انہوں نے اپنا مرکز سیواس کو بنا لیا۔ کمال اتاترک نے سیواس کو ایک قابل اعتماد شہر قرار دیا۔

آزادی کی جدوجہد میں کمال اتاترک کی کاوشوں پر سیواس شہر میں اتاترک کانگریس اینڈ ایتھنوگرافی میوزیم بنایا گیا جہاں آزادی کی جدوجہد سے متعلق تمام معلومات کو اکٹھا کیا گیا ہے۔

آزادی کی تحریک تین سال جاری رہی اور بالآخر 29 اکتوبر 1923 کو جمہوریہ ترکی کا قیام عمل میں آیا اور ترکوں کو آزادی ملی۔

Read Previous

ہیلتھ کیر ڈیوائس کا ایوارڈ ترکی کے نام

Read Next

پیریس سینٹ جرمین کلب کے کھلاڑی ہوئے کورونا وائرس کا شکار

Leave a Reply