ترکیہ نے گندے پانی کو دوبارہ قابل استعمال بنانے کا سالانہ ہدف مکمل کرلیا

ترکیہ کی ماحولیات، شہری منصوبہ بندی اور موسمیاتی تبدیلی کی وزارت نے اعلان کیا ہے کہ ملک نے رواں سال کے اختتام سے قبل استعمال شدہ گندے پانی کو دوبارہ قابل استعمال بنانے کے اپنے 4فیصد کے ہدف کو حاصل کر لیا ہے۔

گذشتہ روز جاری ہونے والی معلومات کے مطابق ترکیہ 4.2% کی شرح تک پہنچنے میں کامیاب ہو گیا ۔

جو سالانہ ہدف سے اعشاریہ2فیصد حاصل کرنا تھا۔

جبکہ ترکیہ اس شرح کو اگلے سال 5 فیصد اور 2030 تک 15 فیصد تک بڑھانے کا ارادہ رکھتا ہے۔

بیان کےمطابق پانی کے دباؤ والے ترکیہ کے لیے علاج شدہ گندے پانی کا دوبارہ استعمال ایک بنیادی مقصد ہے۔

چونکہ بڑھتی ہوئی آبادی کے ساتھ پانی کی کھپت میں اضافہ ہوتا ہے اور موسمیاتی تبدیلی خشک سالی کو بڑھاتی ہے۔چنانچہ پانی کی بچت ملک کے لیے ایک اہم معاملہ ہے۔

وزارت نے بیان میں کہا ہےکہ ترکیہ ممکنہ طور پر مستقبل قریب میں پانی کی قلت کا سامنا کرنے والے ممالک میں شامل ہو گا۔

جن میں موسمیاتی تبدیلیوں کی وجہ سے خشک سالی سے لے کر بڑھتی ہوئی صنعتی اور زرعی سرگرمیوں کے درمیان پانی کے بے تحاشہ استعمال سے پانی کے وسائل میں کمی نے گندے پانی کے دوبارہ استعمال کو اہمیت دے دی ہے اور آج کل ملک میں سالانہ تقریباً 283 ملین کیوبک میٹر گندے پانی کو دوبارہ استعمال کیا جاتا ہے۔

Read Previous

ترکیہ کے جنوب مشرقی صوبے بھی گرمی کی شدت سے نہ بچ سکے

Read Next

یوکرین سے اناج کے پہلے بحری جہاز کی روانگی کے لیے رابطہ کاری کی کوششیں جاری ہیں،ترک وزارت دفاع

Leave a Reply