وزارت دفاع میں کرپشن پر شاہی خاندان کے دو اہم شہزادے نوکریوں سے برطرف

سعودی عرب کے فرماں روا شاہ سلمان نے یمن کے خلاف سعودی عرب کی اتحادی فوج کے سربراہ فہد بن ترکی بن عبدالعزیز اور ان کے بیٹے صوبہ الجوف کے ڈپٹی گورنر پرنس عبدالعزیز بن فہد کو ان کے عہدوں سے برطرف کر دیا ہے۔ دونوں باب بیٹے کو وزارت دفاع میں کرپشن پر عہدوں سے فارغ کیا گیا
دو شہزادوں کے ساتھ وزارت دفاع کے چار مزید ملازمین کے خلاف کرپشن کی تحقیقات شروع کر دی گئیں ہیں۔
یہ فیصلہ سعودی عرب کی اینٹی کرپشن کمیٹی نے سنایا جو ولی عہد محمد بن سلمان نے قائم کی ہے۔ وزارت دفاع مشتبہ مالیاتی کرپشن کی نشاندہی کی گئی تھی جس پر تحقیقات میں پتہ چلا کہ فہد بن ترکی وزارت دفاع میں مالی بدعنوانی میں ملوث ہیں۔
سعودی فرماں روا شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے یمن کے خلاف سعودی عرب کی اتحادی افواج کی سربراہی لیفٹننٹ جنرل مطلق بن سلیم کو سونپ دی ہے۔

Read Previous

ترکی دنیا کی مظلوم عوام کی آواز ہے، ترک عوام کسی صورت انصاف پر سمجھوتہ نہیں کرے گی، صدر طیب ایردوان

Read Next

فیس بک کی آسٹریلیا کو دھمکی

Leave a Reply