turky-urdu-logo

نیٹو کی تاریخ کی سب سے بڑی کثیر القومی فضائی دفاعی مشق ایئر ڈیفنڈر 2023

نیٹو کی تاریخ کی سب سے بڑی کثیر القومی فضائی دفاعی مشق ایئر ڈیفنڈر 2023 گذشتہ ہفتے زور وشور سے جاری رہیں۔

نیٹو کی تاریخ کی سب سے بڑی کثیر القومی فضائی دفاعی مشق ایئر ڈیفنڈر 2023 میں ترک پائلٹوں نے اپنے ساتھی امریکی اور جرمن شرکاء سے داد وصول کی ہے۔

12-23 جون تک، 25 ممالک کے 10 ہزار  شرکاء نے 250 طیاروں کے ساتھ جرمن فضائیہ کی کمان میں یورپی فضائی حدود میں دفاعی مشقیں کیں۔

ترکیہ نے بھی تین F-16 طیاروں کے ساتھ مشق میں حصہ لیا، جس نے بحیرہ اسود کے علاقے میں واقع ترکیہ کے صوبے اماسیا کے ایک قصبے میں 151 ویں سکواڈرن کمانڈ سے اڑان بھری۔

ترک لڑاکا پائلٹ  نے میڈیا کو بتایا کہ ترک فضائیہ نے تین F-16 طیاروں اور 56 اہلکاروں کے ساتھ مشقوں میں حصہ لیا۔

انہوں نے کہا کہ ہمارا مقصد نیٹو کے رکن ممالک کے ساتھ آپریشنل صلاحیت اور ہم آہنگی کو بڑھانا تھا۔

ہمارے لیے، یہ اپنی جنگی تیاری کا مظاہرہ کرنے اور نیٹو کے ارکان کے ساتھ اپنے تعاون کو بڑھانے کا ایک بہترین موقع تھا۔

پائلٹ نے مزید کہا کہ ہم نے تمام ممالک کے ساتھ باہمی طور پر کام کیا۔ ہم نے مختلف ایئربیسز سے بیک وقت مشن انجام دیے۔ ہم نے دیکھا کہ یہ قابل عمل ہے۔ اس طرح کے مشن بھی ایک حقیقی آپریشنل ماحول میں انجام دیے جائیں گے۔ اس لیے یہ ہمارے لیے تربیت کا ایک قیمتی موقع تھا۔

امریکی لیفٹیننٹ کرنل جوش ہگنس، ایک F-15 پائلٹ اور ٹیم کمانڈر جو نیو اورلینز  نے کہا کہ فضائی مشق کے دوران ان کی ترک پائلٹوں کے ساتھ متعدد بات چیت ہوئی، اور انہوں نے انہیں "اچھا اور پیشہ ور” قرار دیا۔

انکا کہنا تھا کہ انہوں نے ایک ساتھ پرواز کرتے ہوئے بہت کچھ  سیکھا۔

ایک جرمن افسر جس نے پوری مشق میں ترک ٹیم کے ساتھ کام کیا،اس نے بھی ان کے تعاون پر اطمینان کا اظہار کیا۔

انہوں نے کہا کہ میں نے نو سال قبل ترک ٹیم کے ساتھ کام کیا تھا۔ اس لیے، میں جانتا تھا کہ کیا امید رکھنی ہے۔ وہ بہترین تھے، اور مشق بہت اچھی رہی۔

Alkhidmat

Read Previous

پاکستان کے چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کی نعمان قرتلمش کو ان کے بطور ترک اسپیکر انتخاب پر مبارکباد

Read Next

وزیر خارجہ پاکستان بلاول بھٹو کی حاقان فدان کو بطور ترک وزیر خارجہ تقرری پر مبارکباد

Leave a Reply