پاکستان کی سویڈن میں قرآن پاک کی بے حرمتی کے بد ترین عمل کی شدید مذمت

پاکستان نے سویڈن میں قرآن پاک کی بے حرمتی کے بد ترین عمل کی  شدید  مذمت کی ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ پاکستان  کا کہنا ہے کہ قرآن پاک کی بےحرمتی سے ڈیڑھ ارب  مسلمانوں کے مذہبی جذبات کو ٹھیس  پہنچی، مسلمانوں کے مذہبی جذبات کو ٹھیس پہنچانا اظہار رائے کی  آزادی میں نہیں آتا۔

ترجمان دفتر خارجہ نے مزید کہا کہ انسانی حقوق کے علمبردار نفرت انگیز عمل کی  روک تھام کی ذمہ داری نبھائیں، انسانی حقوق کے علمبردار  لوگوں کو تشدد پر نہ اکسانے کی ذمہ داری  نبھائیں، اسلام امن کا مذہب ہے۔

ترجمان نے کہا کہ پاکستان سمیت دنیا بھر کے مسلمان تمام مذاہب کے احترام  پر یقین رکھتے ہیں۔

وزیراعظم پاکستان شہبازشریف نے سوئیڈن میں قرآن پاک کی بے حرمتی کی شدید مذمت کرتے ہوئے اپنی ٹویٹ میں کہا کہ اس گھناؤنے فعل کی مذمت کیلئے کوئی الفاظ نہیں ہے، آزادی اظہاررائے کے نام پر مسلمانوں کی دل آزاری نہیں کی جاسکتی۔

صدر مملکت پاکستان ڈاکٹر عارف علوی نے سویڈن میں قرآن پاک کی بے حرمتی کے افسوسناک واقعے کی شدید مذمت کی ہے۔ صدر مملکت عارف علوی  نے کہا ہے کہ قرآن کی توہین کا عمل احمقانہ، اشتعال انگیز اور اسلامو فوبک ہے، یہ غیر اخلاقی واقعہ بلاوجہ اشتعال انگیزی اور دنیا کے مسلمانوں کے جذبات کو مجروح کرنے کا عمل ہے۔

چیئرمین سینیٹ محمد صادق سنجرانی نے سویڈن میں ایک احتجاجی مظاہرے کے دوران مسلمانوں کی مقدس کتاب قرآن پاک کے نسخے کو نذرآتش کرنے کے واقع کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے مذہبی عدم برداشت اور بے حرمتی کی بد ترین مثال قرار دیا ہے۔ چیئرمین سینیٹ نے کہا کہ سویڈش حکومت آزادی اظہارِ رائے کی آڑ میں پوری دنیا کے مسلمانوں کے جذبات کو مجروح کرنے والوں کے خلاف کارروائی کرے۔

چئیر مین پاکستان تحریک انصاف عمران خان، امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق ، مولانا فضل الرحمان اور دیگر سیاسی رہنماوں نے بھی اس افسوس ناک واقعےکی شدید مذمت کی۔

 

 

Read Previous

ترک وزیر خارجہ میلوت چاوش اوغلو کی اپنے پاکستانی ہم منصب سے ملاقات

Read Next

سویڈن میں قرآن پاک کی بے حرمتی، ترکیہ میں احتجاجی مظاہرہ

Leave a Reply