سویڈن میں قرآن پاک کی بے حرمتی، ترکیہ میں احتجاجی مظاہرہ

ترکیہ میں قرآن پاک کی بے حرمتی کے خلاف شدید احتجاجی مظاہرے جاری ہیں۔ استنبول میں سینکڑوں مظاہرین نے سویڈیش قونصلیت  کے سامنے احتجاج کیا۔ شرکا نے ہاتھوں میں سبز پرچم اور بینز اٹھا رکھے تھے۔ جن پر لکھا تھا کہ ہم اسلاموفوبیا کی شدید مذمت کرتے ہیں اور ہم اپنی مقدس کتاب کی بے حرمتی ہرگز قبول نہیں کریں گے ۔ شرکا نے ہاتھوں میں سویڈن انتہا پسند رہنما راسموس پالوڈان کی تصاویر بھی اٹھا رکھی تھی جنہیں نذرِ آتش کیا گیا۔ جبکہ شرکا نے سویڈن کا پرچم بھی نظرِ آتش کیا۔

 

ترک وزیر خارجہ نے اس گھناؤنے اقدام پر ردعمل دیتے ہوئے 27 جنوری کو ہونے والا دورہ بھی منسوح کر دیا اور کہا کہ اظہار رائے کی آزادی کی آڑ میں ہم کسی کو اجازت نہیں دے سکتے کہ ہماری مقدس کتاب کی توہین کر سکے۔ اس لیے سویڈش ہم منصب سے اب ملاقات کا کوئی جواز نہیں ۔

ترک وزیر دفاع حلوصی آقار نے بھی سخت ترین الفاظ میں مزمت کرتے ہوئے کہا کہ اسلاموفوبیا پر مبنی اس عمل سے دنیا بھر میں 1.5 ارب مسلمانوں کے جذبات کو ٹھیس پہنچی ہے۔ اس لیے سویڈیش وزرا سے ملاقات کی اب کوئی اہمیت نہیں ہے۔

Read Previous

پاکستان کی سویڈن میں قرآن پاک کی بے حرمتی کے بد ترین عمل کی شدید مذمت

Read Next

تعلیم کا عالمی دن افغان خواتین اور لڑکیوں کی نام

Leave a Reply