اٹلی نے 1800 سال پرانا آثار قدیمہ کا نمونہ ترکی کے حوالے کر دیا

روم میں ترک سفیر نے بتایا کہ اطالوی حکام نے لائسیئن دور سے تعلق رکھنے والا آثار قدیمہ کا نمونہ طویل عدالتی تضاد کے بعد ترک حکام کے حوالے کر دیا ہے۔

یہ نمونہ 1800 سال پرانہ ہے اور اس پر کی گئی تحریر کے ذریعے ماں باپ کی بیٹے کے چوری کرنے پر شرمندگی کا اظہار کیا گیا ہے۔ یہ تاریحی نمونہ ترکی سے اٹلی اسمگل کر کے لے جایا گیا تھا جسے اطالوی حکام نے 1997 میں بازیاب کروایا۔

سفیر مرات صائم اسینلی اور ان کے ہمراہ وفد نے اطالوی انسداد اسمگلنگ ڈیپارٹمنٹ کے انچارج کلاڈیو موتی سے یہ نمونہ وصول کیا۔

مرات صائم اسینلی نے بتایا کہ عدالتی کاوائی تقریبا دو صدیوں تک جاری رہی اور دوران اطالوی حکام نے نمونے با حفاظت رکھا جس پر ہم ان کے شکر گزار ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ترک وزا نے نمونے کو وطن واپس لانے کے لیے اطالوی حکام سے مکمل تعاون کیا۔

Read Previous

ترکش ایتھلیٹس سب پر بھاری

Read Next

ترکی کا ایردوان کے لیے گستاخانہ الفاظ استعمال کرنے پر یونانی اخبار کے خلاف قانونی چارہ جوئی کا فیصلہ

Leave a Reply