turky-urdu-logo

ترکیہ آنے والے دور میں عالمی رہنما بنے گا،صدر ایردوان

صدر رجب طیب ایردوان نے استنبول میں 10 ویں ورلڈ ترک بزنس کونسل کے دوران خطاب کیا۔

اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ دوسرے ممالک میں رہنے، کام کرنے یا تعلیم حاصل کرنے والے ترک نژاد افراد کی تعداد 80 لاکھ تک پہنچ گئی ہے، صدر ایردوان نے کہا کہ ہمیں ترک ریاستوں کی تنظیم کے رکن میں مبصر ریاستوں کو شامل کرنا چاہیے جیسے آذربائیجان، ازبکستان، قازقستان، اس تعداد میں کرغزستان، ترک جمہوریہ شمالی قبرص، ترکمانستان اور ہنگری ہیں۔

انکا کہنا تھا کہ یہ صرف ہم ہی نہیں ہیں جو اس طاقت کی وسعت کو جانتے ہیں۔ یہاں اپنے تمام مادر وطن اور تارکین وطن کے ساتھ۔ جو لوگ اس تصویر کو اپنے مفادات کے لیے خطرہ سمجھتے ہیں وہ بھی اس حقیقت سے واقف ہیں۔ ترک دنیا، اپنے شاندار تہذیبی پس منظر کے ساتھ جدت اور ترقی کے لیے کھلے ہوئے، اپنے طاقتور ریاستی دستکاری کے ساتھ، اپنے مضبوط سماجی ڈھانچے کے ساتھ اور اپنی بصیرت والی غیر سرکاری تنظیموں کے ساتھ، واقعی ایک نئی صبح کی طرف رواں دواں ہے۔

مواصلات کے شعبے میں حالیہ پیش رفت کی طرف توجہ مبذول کرواتے ہوئے، صدر ایردوان نے کہا کہ مادر وطن اور تارکین وطن کے درمیان تعلقات کی مضبوطی ماضی کے مقابلے میں آج زیادہ آسان ہے۔

انکا کہنا تھا کہ ہم نے سرمایہ کاری، روزگار، پیداوار، برآمدات اور موجودہ حالات کے ذریعے اپنے ملک کو مزید ترقی دینے میں جو پیش رفت کی ہے اسکی مثال نہیں ملتی۔

ہماری محنت کو ترکیہ کے سخت ترین دشمن بھی  نظر انداز نہیں کر سکتے۔

Alkhidmat

Read Previous

نوجوانوں کے لیے ایک سنہرا مستقبل ہماری اولین ترجیح ہے،صدر ایردوان

Read Next

آذربائیجان:آزادی کی 105ویں سالگرہ کے موقع پر ترکیہ اور آذربائیجانی شہداء کی یادگاروں پر ایک پروقار یادگاری تقریب کا انعقاد

Leave a Reply