ڈیٹا سینٹرز پانی کے اندر بھی کام کر سکتے ہیں،مائیکرو سافٹ ٹیسٹ

مائیکرو  سافٹ  ٹیسٹ کی تصدیق کے مطابق  ڈیٹا سینٹرز پانی کے اندر بھی  کام کر سکتے   ہیں۔

شمالی اسکاٹ لینڈ کے اورکنی جزیرے میں زمین  پر موجود سرورز کو ٹھنڈا کرنے کے لیے  استعمال ہونے والی  توانائی کی بچت کے منصوبے   کے دو سال بعد مائیکرو سافٹ نے آخر کار  اس نتیجے   پر پہنچے ہیں کہ  کمپیٹرز کے پاس موجود سیلینڈر  ڈیٹا سینٹر  پانی میں بھی کام کر سکتے ہیں۔

پانی میں موجود سینٹر 40 فٹ  لمبے سفید سلنڈر پر مشتمل ہے جس میں  864  سرورز شامل ہیں جو 5 ملین فلمیں ذخیرہ کرنے کے لیے کافی ہیں۔

اس تجربے کا ہدف پانی کے اندر ڈیٹا مراکز کی تعمیر کی عملداری کا اندازہ لگانا اور کولنگ تک مفت رسائی کا استعمال کرنا تھا – جو زمین پر مبنی ڈیٹا سنٹرز کے لئے سب سے بڑے اخراجات میں سے ایک ہے۔ زمین پر ایک عمارت بنانے سے کہیں زیادہ سمندر میں ڈیٹا سینٹر کی تعیناتی کرنا کہیں تیز تر ہے۔

سمندر میں موجود  ان سیلنڈرز کا ایک منفی پہلو یہ ہے کہ  اگر بورڈ پر موجود کمپیوٹرز ٹوٹ جاتے ہیں تو ان کو ٹھیک نہیں کیا جا سکتا تھا۔دنیا کی معلومات ذخیرہ کرنے کے لیے استعمال ہونے والے بڑے  گوداموں کے مقابلے ڈیٹا سینٹرز بہت کم ہیں۔

لیکن مائیکرو سافٹ کے مطابق ، اس کے تازہ ترین ٹیسٹ سے ثابت ہوا ہے  کہ پانی کے اندر موجود ڈیٹا سینٹرز نہ صرف ٹھنڈک کے لئے بہتر حل ہیں ، بلکہ  زمیں پر موجود سینٹرز سے بہتر  کام کرتے ہیں۔

Read Previous

صدر ایردوان نے جاپان کے نو منتحب وزیر اعظم کو مبارکباد کا پیغام بھیجا

Read Next

وبا نے ماحولیاتی تبدیلی کے بڑھتے ہوئے بحران کی طرف توجہ دلوائی ، ترکی

Leave a Reply