ترکیہ نے کبھی بھی عراقی شہریوں کے خلاف کوئی غلط اقدامات نہیں کیے، وزیر خارجہ

ترک وزیر خارجہ میلوت چاوش اولو کا کہنا ہے کہ ترکیہ نے کبھی بھی عراقی شہریوں کے خلاف کوئی بھی غلط اقدامات نہیں کیے جن سے انہیں نقصان پہنچے۔

ترک وزیر خارجہ کا  ٹی آرٹی کے ساتھ لائیو انٹرویو میں کہنا تھا کہ اطلاعات کے مطابق ترک مصلح افواج نے کبھی بھی عراقی شہریوں پر حملہ نہیں کیا ہے۔

یہ بیان عراق کے دھوک زاکھو ضلع میں ہونے والے حملے میں  8 شہریوں کے مرنے کے بعد سامنے آیا۔

بیان میں ترک وزیر خارجہ کا مزید کہنا تھا کہ میں نے عراقی گورنمنٹ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ دھوک حملے کے بارے میں پی کے کے آرگنائیزیشن کی جانب سے کسی بھی قسم کے پروپیگینڈا کا شکار ہوکر کوئی بیان نہ دیں۔

اسکے علاواہ ترک افواج نے اس بات سے بھی قطع تعلقی کا اظہار کیا ہے کہ وہ کسی بھی دہشت گرد عناصر کی مدد نہیں کر رہے  جنہوں نے شیلینگ کا دعوی کیا ہے۔

ترک وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ ہم ترکیہ کے ایران پر حملے کے ہر قسم کے بیانات کو رد کرتے ہیں اور اس حملے کے اصل مجرموں کو پکڑنے کے لیے ہر قسم کی مدد فراہم کریں گے۔

انکا مزید کہنا تھا کہ عراق میں یہ پروپیگینڈا تب سامنے آیا ہے جب ترکیہ شمالی شام میں آپریشن شروع کرنے والی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ترکیہ بین الاقوامی قوانین پر عمل کرتے ہوئے ہمیشہ دہشت گردوں کے خلاف اپنی جنگ جاری رکھے گا۔

Read Previous

پاکستان اور ترکیہ کے درمیان مثالی برادرانہ تعلقات ہیں، وزیر دفاع خواجہ آصف کی ترک سفیر سے ملاقات

Read Next

گال ٹیسٹ سیریز: پاکستانی کی سری لنکا کو تاریخ ساز شکست

Leave a Reply