ترک جمہوریہ شمالی قبرص میں صدراتی انتحابات

شمالی قبرصی ترک جمہوریہ میں ،11 اکتوبر کو نئے صدر کے انتخاب کے لئے انتخابات ہوئے لیکن کوئی امیدوار پچاس فیصد سے زیادہ ووٹ حاصل کرنے میں کامیاب نا ہو سکا۔

انتخابات کے دوسرے مرحلے کا آغاز 18 اکتوبر سے ہو گا

امیدوار ، جن میں سے 7 آزاد ہیں نے انتخابات میں حصہ لیا 26 اپریل کو ہونے والے صدارتی انتخابات کو کورونا وائرس وبا کی وجہ سے ملتوی کردیا گیا تھا ۔

ان انتخابات میں ترک قبرصی سیاسی تاریخ میں پہلی بار اتنی بڑی تعداد میں صدارتی امیدواروں نے حصہ لیا۔

صدر مصطفی آقنجی ، قومی اتحاد پارٹی (یو بی پی) کے صدر اور وزیر اعظم ایرسین تاتار ، نائب وزیر اعظم اور وزیر برائے امور خارجہ قدرت اوزیر سائے ڈیموکریٹ پارٹی کے کے لفکوشیا سے نمائندے سردار دنکتاش کے درمیان مقابلہ ہوا۔

صدارتی انتخابات کے علاوہ ، آئینی ترمیم کے لئے بھی ریفرنڈم کرایا گیا، جس میں ہائی کورٹ کے ججوں کی تعداد میں اضافے کی تجویز پیش کی گئی ہے۔

شمالی قبرصی ترک جمہوریہ کے صدارتی انتخابات جیتنے کے لیے پچاس فیصد سے زیادہ اکثریت حاصل کرنا ہوگی۔

اگر کسی بھی امیدوار مطلق اکثریت حاصل نہیں ہوتی ہے تو ، 7 دن بعدسب سے زیادہ ووٹ حاصل کرنے والے دو صدارتی امیدواروں کے درمیان مقابلہ اور سب سے زیادہ ووٹ لینے والا امیدوار صدر منتخب ہو جائے گا۔

Read Previous

ترکی میں بچوں کی سکولوں میں واپسی

Read Next

اروچ رئیس تیل و گیس کی تلاش کے لئے دوبارہ مشرقی بحیرہ روم پہنچ گیا

Leave a Reply