fbpx
ozIstanbul

ترک صدر ایردوان کا یورپی عدالت کے حجاب سے متعلق فیصلے پر شدید رد عمل

ترک صدر رجب طیب ایردوان نے یورپی عدالت انصاف کے مسلمانوں کے بنیادی حقوق اور آزادی  کو صلب کرنی کی کوشش پرشدید ردِ عمل کا اظہار کیا ہے۔

ترک جمہوریہ شمالی قبرصی روانگی سے قبل پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے  یورپی عدالت کے حجاب کے متعلق فیصلے کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ یورپی عدالت عظمیٰ کو اپنا نام تبدیل کرنے کی ضرورت ہے۔ اس قسم کے فیصلوں سے عدالت کا کوئی تعلق نہیں ۔ یورپی عدالت کو پہلے تو عقیدے کی آزادی کے متعلق آگاہی کی ضرورت ہے۔

صدر کا کہنا تھا کہ کیا اس عدالت میں یہودیوں کے کیپا پہنے پر پابندی لگانے کی ہمت ہے؟ کیا یہ عدالت اس قسم کا فیصلہ کر سکتی ہے؟

15 جولائی کو  یورپی عدالت انصاف نے دو خواتین کے کمپنی میں حجاب لینے کے معاملے پر فیصلہ سنایا تھا  جنہیں آفس میں سر ڈھانپنے کی وجہ سے ملازمت سے برخاست کردیا گیا تھا ، اور یہ فیصلہ دیا تھا کہ یورپ میں کمپنیاں اپنے ملازمین پر مخصوص شرائط کے تحت اسکارف یا حجاب پہننے پر پابندی عائد کرسکتی ہیں۔

پچھلا پڑھیں

ترکی طالبان کے ساتھ افغان امن پر تبادلہ خیال کے لیے تیار ہے،صدر اردوغان

اگلا پڑھیں

سعودی عرب: بیرون ممالک پھنسے شہریوں کی ویزہ توسیع فیس معاف

تبصرہ شامل کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے