درآمدات میں کمی سے پاکستان کے کرنٹ اکاؤنٹ خسارے میں 57 فیصد کمی

درآمدات میں کمی سے پاکستان کے کرنٹ اکاؤنٹ خسارے میں 57 فیصد کمی ریکارڈ کی گئی۔

نومبر میں خسارہ چھبیس کروڑ ڈالر تک محدود ہو گیا۔

امپورٹس میں سولہ فیصد کمی آئی تاہم ایکسپورٹس میں اضافہ نہیں ہو سکا۔

امپورٹ بل کنٹرول کرنے کی حکومتی کوششیں کامیابہو گئیں۔

ملک کی بیرونی ادائیگیوں کا توازن درست تو نہ ہو سکا تاہم خسارے میں کمی ضرور آئی۔

اسٹیٹ بینک کے مطابق رواں مالی سال کے پانچ ماہ میں خسارہ تین ارب ڈالر رہا۔

گذشتہ سال یہی خسارہ سات ارب ڈالر سے زائد تھا۔

کرنٹ اکاؤنٹ خسارے میں کمی کی بڑی وجہ امپورٹس میں سولہ فیصد کمی ہے۔

پانچ ماہ میں تجارتی خسارہ تیرہ ارب سڑسٹھ کروڑ ڈالر رہا جو ایک سال پہلے انیس ارب ڈالر سے زائد تھا۔

بیرونی ادائیگیوں میں عدم توازن کی ایک بڑی وجہ ترسیلات زر میں ایک ارب اٹھائیس کروڑ ڈالر کی کمی بھی ہے۔

امپورٹس میں کمی سے کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ تو کم ہوا لیکن صنعتی شعبہ بری طرح متاثر ہو رہا ہے۔ چار ماہ میں صنعتی پیداوار میں تین اعشاریہ چھ فیصد کمی ریکارڈ کی گئی ہے۔

Read Previous

پاکستان: اے کیو پروڈکشن کے سی ای او کا یونس ایمرے انسٹی ٹیوٹ کا دورہ

Read Next

پاکستان:ترک سفیر کی وفاقی وزیر ریلوے خواجہ رفیق سے ملاقات

Leave a Reply