کشمیری آج یوم الحاق پاکستان منا رہے ہیں

کشمیری آج یوم الحاق پاکستان منا رہے ہیں۔

یوم الحاق پاکستان کے موقع پر آزادی کے حق اور بھارتی ناجائز فوجی قبضے کے خلاف کنٹرول لائن کے دونوں اطراف جلسے جلوس اور ریلیاں نکالی جارہی ہیں۔

قرار داد الحاق پاکستان 19جولائی 1947کو سری نگر میں منظور کی گئی تھی۔

کنٹرول لائن کے دونوں جانب اور دنیا بھر میں مقیم کشمیری آج یوم الحاق پاکستان اس تجدید عہدکے ساتھ منا رہے ہیں کہ ایک نہ ایک دن وہ بھارتی مسلح افواج سے اپنی آزادی حاصل کرکے رہیں گے۔

کشمیری بھارتی تسلط سے آزادی اور جموں و کشمیر کے پاکستان میں مکمل انضمام تک اپنی جدوجہد جاری رکھیں گے۔

یاد رہے کہ تحریک پاکستان کے آغاز سے ہی مسلمانان کشمیر نے دو قومی نظریے کی بنیاد پر آزاد مملکت کے حصول کی جدوجہد میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا اور قیام پاکستان کے بعد 19 جولائی 1947 کو ریاستی عوام کی نمائندہ جماعت آل جموں و کشمیر مسلم کانفرنس کے پلیٹ فارم پر سرینگر میں منعقدہ اجلاس میں الحاق پاکستان کی قرار داد منظور کی۔

اس دن کی یاد میں 19 جولائی کو ہر سال کشمیری یوم قرارداد الحاق پاکستان کے طور پر مناتے ہیں۔

مقبوضہ کشمیر کی کُل جماعتی حریت کانفرنس کا کہنا ہے کہ کشمیر کی تاریخ میں 19 جولائی کا دن خصوصی اہمیت کا حامل ہے، یوم الحاق پاکستان پر بھارت کے جبری قبضے سے آذادی تک جدوجہد جاری رکھنے کے عزم کی تجدید کی جائے گی۔

آل جموں و کشمیر مسلم کانفرنس نے 19 جولائی 1947 کو الحاق پاکستان کی قرارداد متفقہ طور پر منظور کی تھی۔

اس تاریخی قرارداد میں کشمیری مسلمانوں کی اُمنگوں پر جموں کشمیر کا پاکستان سے الحاق کا مطالبہ کیا گیا تھا، کشمیریوں کا یہ فیصلہ پاکستان سے اپنا مستقبل جوڑنے کا منہ بولتا ثبوت ہے۔

Read Previous

برطانیہ: انٹرنیشنل ائیر شو 2022 میں ترک ڈرون طیاروں کی شرکت

Read Next

ترکیہ ایک خودمحتار ریاست ہے، کسی شرائط کا پابند نہیں ہے، ترک وزیر دفاع

Leave a Reply