fbpx
ozIstanbul

افغانستان میں امداد پہنچانا ہمارا اخلاقی فریضہ ہے، ترک وزیر خارجہ

ترک وزیر خارجہ میلوت چاوش اولو کا کہنا ہے کہ افغانیوں کو امداد پہینچانا ہمارا اخلاقی فریضہ ہے۔

اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل انتونیو گوتریس کے زیر صدارت افغانستان  میں انسانی صورتحال پر منعقدہ اجلاس میں وزیر خارجہ میلوت چاوش اولو نے کہا کہ افغانستان میں انسانی بحران اور سیکورٹی کے مسائل پوری دنیا کے لیے خطرے کی گھنٹی ہیں۔

انہوں نے روز دیتے ہوئے کہا کہ افغانستان کو عالمی توجہ کی ضرورت ہے اور سکریٹری جنرل کی ہدایت پر عالمی اداروں کو فوری اقدامات کرنے چاہیے۔

تاہم افغانستان میں امداد پہنچانے کے لیے ضروری ہے وہاں سیکورٹی کی صورتحال یقینی ہو۔ تمام ادارے محفوظ ماحول میں ضرورت مندوں تک پہنچ سکیں اور امداد پہنچا سکیں۔ وزیر کا کہنا  تھا کہ امید ہے اس زمن میں نئی افغان حکومت کردار ادا کرے گی۔

میلوت چاوش اولو نے مزید کہا کہ افغانستان میں تقریبا نصف آبادی انسانی امداد کی منتظر ہے جبکہ ایک تہائی عوام کو کھانے کی قلت کا سامنا ہے۔

انہوں نے کہا کہ 1920 کی دہائی سے ترکی افغانستان میں استحکام اور ترقی کے لیے کوشاں ہے بشمول لڑکیوں کی تعلیم اور خواتین کو بااختیار بنانا ، انہوں نے مزید کہا کہ آج ترکی  ترک ہلال احمر کے ذریعے افغانستان میں انسانی امداد فراہم کر رہا  ہے۔

پچھلا پڑھیں

افغانستان میں نئی حکومت کے قیام کے بعد کابل کے لیے پی آئی اے کی پہلی کمرشل پرواز

اگلا پڑھیں

20 سال کے دوران امریکہ نے افغانستان میں یومیہ 29 کروڑ ڈالر خرچ کیے

تبصرہ شامل کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے