fbpx
ozIstanbul

پاکستان اور چین کے تعلقات باہمی مفادات کے تحفظ کیلئے مزید مضبوط ہو رہے ہیں، چیف آف آرمی سٹاف

پاکستانی چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ پاکستان اور چین کے تعلقات باہمی مفادات کے تحفظ کیلئے مزید مضبوط ہو رہے ہیں، سیکورٹی کی بدلتی ہوئی صورتحال میں علاقائی امن و سلامتی کے لئے ہماری شراکت داری کی اہمیت مزید بڑھتی جا رہی ہے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے جی ایچ کیو میں پیپلز لبریشن آرمی کے 94ویں یوم تاسیس کے سلسلے میں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے اس اہم تقریب میں بطور مہمان خصوصی شرکت کی۔ تقریب میں چینی سفیر نونگ رونگ، دفاعی اتاشی میجر جنرل چن وینرونگ، چینی سفارتخانے کے حکام اور پاکستان کی تینوں مسلح افواج کے افسران نے بھی شرکت کی۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے اپنے خطاب میں چین کے دفاع، سلامتی اور قومی تعمیر میں پیپلز لبریشن آرمی (پی ایل اے) کردار اور اس کی قیادت کو سراہا۔ دونوں ممالک کے درمیان گہرے تعلقات کی مختلف جہتوں کو اجاگر کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستان اور چین کے منفرد اور انتہائی قریبی تعلقات ہیں جو ہر آزمائش پر پورے اترے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ سیکورٹی کی بدلتی ہوئی صورتحال میں پاکستان اور چین کی شراکت داری کی علاقائی امن و سلامتی کے اہمیت مزید بڑھتی جا رہی ہے۔ آرمی چیف نے کہا کہ ماضی اور حال میں درپیش ہر چیلنج میں ہم نےایک دوسرےکا ساتھ نبھایا۔

جنرل قمر جاوید باجوہ کا کہنا تھا کہ پیپلز لبریشن آرمی اور پاک فوج مشکل وقت کے بھائی ہیں، باہمی مفادات کے تحفظ کے لیے ہمارے تعلقات مسلسل مضبوط ہو رہے ہیں۔ اس موقع پر چین کے دفاعی اتاشی نے بھی خطاب کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان اور چین ہر آزمائش پر پورا اترنے والے دوست، سٹریٹیجک پارٹنر اور آہنی بھائی ہیں۔

دنیا میں جیسی بھی تبدیلیاں آئیں ہم ہمیشہ اپنی قومی خودمختاری اور علاقائی سالمیت کے تحفظ اور علاقائی امن واستحکام کیلئے ایک دوسرے کے کھڑے رہیں گے۔ چین کے دفاعی اتاشی نے چین کی پیپلز لبریشن آرمی کے یوم تاسیس پر استقبالیہ تقریب کا انعقاد کرنے پر آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے صدر شی جن پنگ کے بیان کو بھی دہرایا جس میں انہوں نے پاکستان کی مسلح افواج کو پاک چین سٹرٹیجک تعلقات کا اہم ستون قرار دیا تھا۔

پچھلا پڑھیں

یمن سے تعلق رکھنے والے 100 سے زائد اساتذہ کو سعودی یونیورسٹیوں نے خارج کردیا

اگلا پڑھیں

افغانستان: سیلاب کے نتیجے میں 80 افراد جاں بحق، درجنوں لاپتہ

تبصرہ شامل کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے