fbpx
ozIstanbul

پاکستان اور روس کا دو طرفہ تعلقات کو مضبوط کرنے پر اتفاق

پاکستان اور روس نے دوطرفہ عسکری تعلقات مضبوط کرنے پر اتفاق کر لیا ہے۔

یہ اتفاق پاکستان میں منعقد ہونے والے روس ۔ پاکستان مشترکہ ملٹری مشاورتی کمیٹی جے ایم سی سی کے اجلاس میں کیا گیا۔

سیکریٹری دفاع ریٹائرڈ لیفٹیننٹ جنرل میاں محمد ہلال حسین اور روسی نائب وزیر دفاع کرنل جنرل الیگزینڈر وی فومن نے اپنے اپنے ممالک کے وفود کی نمائندگی کی۔

دو طرفہ دفاعی تعاون کے فورم کے طور پر جے ایم سی سی کا قیام 2018 میں عمل میں آیا تھا، اسلام آباد اور ماسکو کے درمیان عسکری شراکت داری 2014 میں ہونے والے دوطرفہ دفاعی تعاون کے معاہدے کی رو سے جاری ہے، دونوں ممالک کے درمیان تعاون کا معاہدہ ہونے کے بعد دفاعی تعلقات بھی مستحکم انداز میں فروغ پارہے ہیں۔

پاکستانی وزارت دفاع کا اپنے بیان میں کہنا تھا کہ جے ایم سی سی کے اجلاس میں دونوں ممالک کے فریقین نے دوطرفہ تعلقات اور مختلف شعبہ جات میں باہمی تعاون کا جائزہ لیا جس میں فوجی تربیت، مشترکہ مشقیں، انٹیلی جنس تعاون اور دفاعی صنعتی تعاون شامل ہے۔

دونوں فریقین نے اجلاس میں لیے گئے فیصلوں کے مؤثر جائزے اور نفاذ پر اتفاق کرنے کے علاوہ اس اُمید کا اظہار کیا کہ جے ایم سی سی دفاعی تعاون کو مضبوط کرتی رہے گی۔

روسی اخبار نے جنرل الیگزینڈر فومن کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ مذاکرات کے دوران دونوں فریقین نے فوجی میدان میں متحرک طور پر فائدہ مند تعلقات کے فروغ کی تعریف کی اور زیادہ سے زیادہ مؤثر انداز میں فوجی تعاون کو مضبوط بناتے ہوئے مجموعی صلاحیتیں شامل کرنے کے ارادے کی تصدیق کی۔

جنرل الیگزینڈر نے پاک ۔ روس دفاعی تعاون کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ علاقائی سلامتی کے لیے اس کی توسیع لازمی ہے۔

انہوں نے بات جاری رکھتے ہوئے کہا کہ پاکستان اور روس کے تعلقات میں تعمیری پیش رفت خطے میں استحکام یقینی بنانے کے لیے ضروری ہے۔

انہوں نے یاد دہانی کرائی کہ پاکستان ان چند ممالک میں سے ایک ہے جس کے ساتھ روس نے دنیا میں عالمی وبا کے خراب حالات کے باوجود اپنے سابقہ منصوبے جاری رکھے ہیں۔

اجلاس میں افغانستان میں سامنے آنے والے پیش رفت پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔

جنرل الیگزینڈر فومن نے کہا کہ افغانستان پر ‘گہرے اور تعمیری’ انداز میں بات ہوئی۔

انہوں نے 2022 میں جے ایم سی سی کے چوتھے اجلاس کے انعقاد پر بھی رضامندی کا اظہار کیا۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کے مطابق تقریب کے مہمان خصوصی روسی شہر گریاچی کلوچ کے میئر سرگئی بلوپولسکی تھے۔

تقریب میں پاکستان اور روس کے سینئر افسران نے بھی شرکت کی۔

پچھلا پڑھیں

ترکی جیسے چاہے اپنی دفاعی صلاحیتوں کو مضبوط کرسکتا ہے، صدر ایردوان

اگلا پڑھیں

یورپی یونین کی جانب سے افغانستان کے لیے 30 کڑور سے زائد رقم مختص

تبصرہ شامل کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے