turky-urdu-logo

پسماندہ ممالک کیلئے قرض کی شرائط کو آسان کیا جائے، وزیر اعظم پاکستان

دوحہ میں پسماندہ ممالک کی پانچویں کانفرنس سے  وزیر اعظم پاکستان میاں محمد شہباز شریف نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پسماندہ ممالک ماحولیاتی تبدیلیوں کے باعث آنے والی قدرتی آفات کا شکار بھی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پسماندہ ممالک کی ترقی کےلئے مل کر اقدامات کرنا ہوں گے،پسماندہ ممالک کے لیے قرض کی شرائط کو آسان کیا جائے ، عوام کو سماجی تحفظ کی فراہمی اور جدید ٹیکنالوجی تک آسان رسائی یقینی بنائی جائے،پاکستان دوحہ پروگرام آف ایکشن کے نفاذ کی بھرپور حمایت کرتا ہے۔ پسماندہ عالمی آبادی کا 14 فیصد حصہ ہیں لیکن ان کا عالمی جی ڈی پی میں حصہ صرف ایک عشاریہ تین فیصد ہے، عالمی تجارت میں ان کا حصہ صرف ایک فیصد اور گلوبل ایف بی آئی میں ان کا حصہ ایک عشاریہ چار فیصد ہے۔

وزیر عظم شہباز شریف کا مزید کہنا تھا کہ  متعدد بحرانوں نے ان ترقی یافتہ ممالک کا جی ڈی پی مزید کم کردیا، ان کی تجارت مزید کم ہو گئی ، غربت، غذائی عدم تحفظ اور عدم مساوات میں مزید اضافہ ہوگیا۔

انہوں نے کہا کہ ان حالات میں پاکستان جیسے ممالک  کے ترقی کے اہداف کوبہت نقصان پہنچا ہے ، پاکستان ترقی یافتہ ممالک کے ساتھ معاشی ترقی اور سماجی خوشحالی کے لیے تعاون کے عزم کا اظہار کرتا ہے۔

پسماندہ ممالک کی ترقی کے لیے ویکسین کی فراہمی، ان کے قرضوں کے بوجھ کی کمی، معاشرے کے کم زور طبقات کو سماجی تحفظ کی فراہمی، عالمی قرض دہندہ اداروں کو عوامی مفاد میں ری اسٹرکچر کرنے کی ضرورت ہے، اس کو عوامی مسائل و مشکلات کے حل کے لیے خصوصی طور پر ڈیزائن کرنا ہوگا۔

 

Alkhidmat

Read Previous

ترکیہ جلد متحدہ عرب امارات کے ساتھ تجارتی حجم 25 ملین ڈالر تک بڑھائے گا، صدر ایردوان

Read Next

وزیر اعظم پاکستان کی امیر قطر سے ملاقات، دوطرفہ  تعلقات پر تبادلہ خیال

Leave a Reply