یوم استحصال کشمیر کے حوالے سے ترکیہ میں پاکستانی سفارتحانے میں تقریب کا انعقاد

پاکستانی سفارت خانہ انقرہ میں تیسرے یوم استحصال کشمیر کے موقع پر ایک تقریب کا انعقاد کیا گیا۔

تقریب میں سول سوسائٹی، میڈیا، تھنک ٹینکس اور انقرہ میں مقیم کشمیریوں کے نمائندوں نے شرکت کی۔

اس موقع پرترکیہ میں پاکستان کے سفیر سائرس سجاد قاضی نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر کی 1947 سے اب تک کی مظلوم تاریخ میں شاید ہی کوئی دن ایسا گزرا ہو جب قابض بھارت نے کشمیری عوام کے ساتھ برا سلوک روا نہ رکھا ہو۔

قابض بھارت کا خیال تھا کہ 05 اگست 2019 کے اقدامات سے کشمیریوں کی جدوجہد آزادی اور امن کو خاموش کرنے میں مدد ملے گی لیکن وہ اس میں ناکامیاب رہے۔

کشمیریوں کی جدوجہد زندہ ہےاور 05 اگست 2019 سے پہلے کی نسبت زیادہ مضبوط ہے اور کشمیری اپنا جائز حق خودارادیت حاصل کرنے کے لیے زیادہ پرعزم ہیں، جس کا کشمیریوں سے وعدہ اقوام متحدہ، پاکستان اور بھارت نے کیا تھا۔

سائرس سجاد قاضی نےکشمیر پر اصولی مؤقف پر ترک عوام اور حکومت کا شکریہ ادا کیا اور اس بات پر روشنی ڈالی کہ کشمیر کے ساتھ ترکیہ کی حمایت اور یکجہتی ہندوستانی مقبوضہ جموں و کشمیر کے لاکھوں مظلوم عوام کے لیے بڑی طاقت اور ان کے حق کے حصول کے لیے ایک اہم کردار ہے۔

خود ارادیت کے لیے سفیر قاضی نے اس بات کا اعادہ کیا کہ پاکستان کشمیریوں کی سیاسی، اخلاقی اور سفارتی حمایت جاری رکھے گا اور اس عزم کا اعادہ کیا کہ کشمیری بھائیوں کی آزادی کے جائز مقصد میں ان کے ساتھ کندھے سے کندھا ملا کر کھڑا ہو گا۔

پاکستان کے صدر، وزیراعظم اور وزیر خارجہ کے پیغامات ڈپٹی ہیڈ آف مشن عباس سرور قریشی نے پڑھ کر سنائے ۔

مظلوم کشمیریوں کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے قیادت نے اس بات کا اعادہ کیا کہ بھارت 05 اگست 2019 کے اپنے غیر قانونی اور یکطرفہ اقدامات کو واپس لے اور اقوام متحدہ کی سرپرستی میں منصفانہ اور غیر جانبدارانہ رائے شماری کرائے جیسا کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی متعلقہ قراردادوں میں درج ہے۔

آج کے دن بھارتی حکومت نے بنیادی قانونی اصولوں اور قواعد کی خلاف ورزی کرتے ہوئے، غیر قانونی اور یکطرفہ طور پر بھارتی آئین کے آرٹیکل 370 اور 35-A کو منسوخ کر دیا تھا۔

تقریب میں تصویری نمائش کا بھی انعقاد کیا گیا۔

Read Previous

صدر ایردوان روسی صدر کی دعوت پر سوچی پہنچ گئے

Read Next

غزہ پر شدید اسرائیلی بمباری، 5 سالہ بچی سمیت 15 فلسطینی شہید

Leave a Reply