fbpx
ozIstanbul

افغان حکومت کی بین الاقوامی ایئرلائنز سے افغانستان کے لیے پروازیں بحال کرنے کی اپیل

افغان حکومت نے بین الاقوامی ایئرلائنز سے افغانستان کے لیے پروازیں بحال کرنے کی اپیل کردی۔

افغانستان میں طالبان کی حکومت نے بین الاقوامی ایئرلائنز سے پروازیں بحال کرنے کی اپیل کرتے ہوئے وعدہ کیا کہ وہ ایئرلائنز سے مکمل تعاون کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ کابل ایئرپورٹ پر موجود تمام مسائل حل کر دیے گئے ہیں۔

یاد رہے کہ 15 اگست کو مغربی طاقتوں کی حمایت یافتہ صدر اشرف غنی کی حکومت کے خاتمے کے بعد طالبان نے افغانستان پر باقاعدہ حکومت سازی کا اعلان کیا تھا تاہم وہ اپنی حکومت کو عالمی سطح پر قابل قبول بنانے کے لیے کئی اقدامات کر رہے ہیں۔

کابل ایئرپورٹ پر غیر ملکی فوجیوں اور شہریوں کے انخلا کا عمل مکمل ہونے کے بعد امداد اور مسافروں کو لے کر پروازوں کو محدود تعداد آپریٹ کر رہی ہے۔

غیر ملکی فوجیوں اور شہریوں کے انخلا کے دوران کابل ایئرپورٹ پر خود کش حملہ بھی ہوا تھا جس کے نتیجے میں ایئرپورٹ کو نقصان بھی پہنچا تھا لیکن قطر اور ترکی کی معاون ٹیموں کی مدد سے ایئرپورٹ کو کھول دیا گیا تھا۔

پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائنز پی آئی اے سمیت چند ایئرلائنز محدود سروسز فراہم کررہی ہیں اور مسافروں کو پروازوں میں جگہ مل رہی ہے جبکہ کرایوں میں معمول کے مقابلے میں کئی گنا اضافے کی شکایات بھی موصول ہورہی ہیں۔

افغان وزارت خارجہ کے ترجمان عبدالقاہر بلخی کا کہنا تھا کہ بین الاقوامی پروازیں منسوخ ہونے سے بیرون ملک کئی افغان شہری پھنسے ہوئے ہیں اور کئی شہری کام یا تعلیم کے لیے بھی نہیں جا پا رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کابل ایئرپورٹ میں مسائل حل کردیے گئے ہیں اور ایئرپورٹ مقامی اور بین الاقوامی پروازوں کے لیے مکمل طور پر فعال ہے، امارات اسلامی افغانستان (آئی ای اے) تمام ایئرلائنز کو مکمل تعاون کی یقین دہانی کروا رہی ہے۔

طالبان کو افغانستان میں حکومت سنبھالنے کے بعد سے شدید معاشی بحران کا سامنا ہے اور عالمی سطح پر لڑکیوں کی تعلیم سمیت دیگر معاملات پر دباؤ کا بھی سامنا ہے جبکہ سابق عہدیداروں اور شہریوں کی جانب سے بھی احتجاج کیا جا رہا ہے۔

پچھلا پڑھیں

پاک بھارت میں خواتین کے حقوق کی علمبردار کملا بھاسن انتقال کر گئیں

اگلا پڑھیں

ترکی پاکستان اور آذربائیجان کے درمیان زمینی تجارت شروع

تبصرہ شامل کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے